وزیر اعلیٰ سے وزیر اقلیتی امور کی قیادت میں سکھ برادری کے وفد کی ملاقات،سکھ لڑکی کا معاملہ خوش اسلوبی سے حل کرنے پر شکریہ ادا کیا

News Date: 
Sunday, September 8, 2019

لاہور8 ستمبر:وزیر اعلیٰ پنجاب سردار عثمان بزدارسے صوبائی وزیر انسانی حقوق و اقلیتی امور اعجاز عالم کی قیادت میں سکھ برادری کے وفد نے ملاقات کی۔ملاقات کرنے والوں میں رکن پنجاب اسمبلی مہندر پال سنگھ (Mr. Mahindar Pall Singh)، پرم جیت سنگھ سرنا (Mr. Pram Jeet Singh Sarna)، ہرمیندر سنگھ سرنا (Mr. Harmindear Singh Sarna) اور روپا کور (Roupa Kour) شامل تھیں۔سکھ برادری کے وفد نے ننکانہ صاحب میں سکھ لڑکی کی شادی کا معاملہ خوش اسلوبی سے حل کرنے پر وزیراعلیٰ کا شکریہ ادا کیا۔وفد سکھ برادری نے کہا کہ اس معاملے کو حل کرنے کے لئے آپ کی ذاتی کاوشوں کو قدر کی نگاہ سے دیکھتے ہیں۔وزیراعلیٰ نے اس موقع پر گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ تحریک انصاف کی حکومت سکھ برادری سمیت دیگر اقلیتوں کے حقوق کے تحفظ کیلئے سرگرم عمل ہے۔سکھ برادری کو پاکستان میں اپنی مذہبی رسومات کی ادائیگی کے لئے مکمل آزادی ہے۔سکھ بھائی جتنا آج پاکستان کے قریب آ چکے ہیں، ماضی میں اس کی کوئی مثال نہیں ملتی۔انہوں نے کہا کہ مسئلہ کشمیر پر دنیا بھر کے سکھ پاکستان کے موقف کی حمایت کر رہے ہیں۔امریکہ اور برطانیہ سمیت کئی ممالک میں کشمیریوں کے حق میں ہونے والے مظاہروں میں بھی سکھ بھائی شریک ہوئے ہیں۔پاکستان ایک امن پسند ملک ہے اورہم امن پر یقین رکھتے ہیں۔پنجاب حکومت نے حال ہی میں سکھ کنونشن منعقد کیے جس میں دنیا بھر سے سکھ برادری نے شرکت کی۔انہوں نے کہا کہ ہمیں اپنے سکھ بھائیوں کی میزبانی کرکے دلی خوشی ہوئی ہے۔پنجاب حکومت نے ننکانہ صاحب میں بابا گورو نانک یونیورسٹی کا سنگ بنیاد رکھ دیا ہے۔ یونیورسٹی پر تقریباً 6 ارب روپے لاگت آئے گی۔انہوں نے کہا کہ ننکانہ صاحب کی سڑکوں کی تعمیر و مرمت کیلئے 15 کروڑ روپے کی خطیر رقم فراہم کی گئی ہے۔ ان سڑکوں کی تعمیر و مرمت سے سکھ یاتریوں کو آمد و رفت کی بہترین سہولتیں میسر ہوں گی۔ پاکستان مقامی سکھ برادری اور بھارت سے آنیوالے یاتریوں کی مذہبی روایات کے احترام اور مقدس مقامات تک ان کی رسائی کیلئے سہولتیں فراہم کرتا رہا ہے اور آئندہ بھی کریگا۔  ہر پاکستانی اپنے سے بڑھ کر اقلیتوں کے تحفظ کا خیال رکھتا ہے۔انہوں نے کہا کہ بابا گورو نانک کے 550 ویں جنم دن کی تقریبات میں شرکت کیلئے آنے والے سکھ یاتریوں کو سکیورٹی سمیت دیگر سہولتوں کی فراہمی کو سو فیصد یقینی بنایا جائے گا۔انہوں نے کہا کہ اقلیتوں کی فلاح و بہبود کیلئے مختلف پروگرامز پر عملدرآمد کیلئے تقریباً ایک ارب روپے کی رقم مختص کی گئی ہے۔مینارٹی امپاورمنٹ پیکیج متعارف کرایا گیا ہے۔نیا پاکستان تحمل، برداشت، بھائی چارے اور یگانگت کے سنہرے اصولوں پر چل رہا ہے۔ انہوں نے کہا کہ سکھ برادری کی سہولت کیلئے وزیراعظم عمران خان کی قیادت میں حکومت نے کرتارپور کوریڈور کھولنے کیلئے سنجیدہ اقدامات کئے ہیں۔